• 24newspk

” بابر اعظم کو اپنے حاملہ ہونے کی خبر دی تو اس نے۔۔۔۔ لڑکی نے بابر اعظم پر سنگین الزام عائد کر دیے

Updated: Dec 24, 2020


لاہور( کرکٹ نیوز پی کے) پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم جو اپنی بہترین بیٹنگ کی وجہ سے تھوڑے سے عرصے میں پوری دنیا میں مشہور ہوگئے ہیں ۔لاہور کی ایک حامزہ نامی لڑکی نے بابر اعظم پر جنسی تعلق قائم کرنے کا الزام عائد کر دیا۔


تفصیلات کے مطابق قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان اور دنیائے کرکٹ کے بہترین کھلاڑی بابر اعظم پر ایک لڑکی جن کا نام حامزہ ہے انہوں نے لاہور پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے الزام لگایا ہے کہ بابر اعظم نے میرے ساتھ جنسی تعلقات قائم کیے اور حالات بہتر ہونے پر شادی کرنے کا وعدہ بھی کیا۔حامزہ نے بتایا کہ میں 2015 میں حاملہ ہوگئی تھی اور میں نے جب بابر اعظم کو بتایا تو اس نے مجھے بہت مارا۔


حامزہ مختار کا کہنا تھا کہ انہوں نے بھائی اور دو دوستوں کے ساتھ مل کر میرا اسقاط حمل کر دیا۔انہوں نے عثمان قادر میرے حالات کے بارے میں سب کچھ جانتے ہیں ۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ بابر اعظم نے مجھ پر دباوّ ڈلا کہ میں گھر واپس چلی جاوں اور صلح کر لوں۔بابر اعظم کو عروج ملتا گیا تو ان کی حوس بڑھتی گئی اور بابر اعظم نے میرے ساتھ ناجائز تعلقات رکھے۔حامزہ مختار نے بتایا کہ بابر اعظم نے 2017 میں میرے اوپر بہت تششدد کیا اور مجحے ہسپتالوں میں لے کر جاتا تھا ان سب کے ثبوت میرے پاس ہیں۔میں نے تنگ آکر بابر اعظم کے خلاف پولیس میں درخواست جمع کروائی۔بابر اعظم نے مجھ سے 2010 میں شادی کرنا چاہتے تھے اس کے بعد 2011 میں ہم دونوں کورٹ میرج کرنے کے لئے بھاگے تھے اور گلبرگ اور ڈفینس میں مقیم رہے لیکن پھر حالات دیکھ کر بابر اعظم نے شادی سے انکار کر دیا۔

حامزہ نے کہا کہ میں نے پی سی بی اور تھانہ نصیرآباد میں درخواست جمع کروائی لیکن ابھی تک بابر اعظم کے خلاف کوئی کاروائی نہیں ہوئی۔میں بیوٹی پارلر پر کام کرتی تھی اور ساری کمائی بابر اعظم کو دے دیتی تھی بابر اعظم کو قسطوں پر آئی فون لے کر دیا ،میرا مطالبہ ہے کہ بابر اعظم مجھ سے شادی کریں۔حامزہ نے کہا کہ میں پی سی بی سے مطالبہ کرتی ہوں کہ بابر اعظم کے خلاف ایکشن لیں ورنہ میں خود کو پاکستان کرکٹ بورڈ کے سامنےآگ لگا دوں گی۔


لاہور پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے حامزہ مختار نے کہا بابراعظم نے 2010ء میں انہیں ان کے گھر میں شادی کی پیش کش کی تھی لیکن دونوں خاندان متفق نہیں تھے ، وہ 2011 میں بابر کے ساتھ کورٹ میرج کے لیے بھاگیں اور پھر گلبرگ اور پنجاب ہاؤسنگ سوسائٹی میں مختلف مکانوں میں رہائش پذیر رہیں،بابرنے حالات دیکھتے ہوئے مجھ سے شادی سے انکار کردیا۔


حامزہ کا کہنا تھا کہ انہوں نے پی سی بی اور تھانہ نصیرآباد میں بھی بابراعظم کےخلاف کاروائی کی درخواستیں دیں لیکن ابھی تک ان کے خلاف کوئی ایکشن نہیں لیا گیا ہے ۔ حامزہ مختار نے مطالبہ کیا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ فوری طور پر بابراعظم کےخلاف ایکشن لیتے ہوئے اسے کپتانی سے ہٹائے ورنہ میں پی سی بی کے دفتر کے باہر خود سوزی کرلوں گی۔

107 views0 comments