• 24newspk

حارث سہیل کو بہترین اعدادوشمار کے باوجود سلیکٹرز کیوں نظر انداز کر رہے ہیں؟ بڑی وجہ سامنے آگئی


ویب ڈیسک (24 نیوز پی کے)پاکستان کے اسٹائلش مڈل آرڈر بلے باز حارث سہیل نے 2021/22 قائد اعظم ٹرافی کے 10ویں میچ میں خیبر پختونخواہ کے خلاف بلوچستان کے مقابلے کے بعد سے مسابقتی کرکٹ میں حصہ نہیں لیا ہے۔


اگرچہ یہ قیاس آرائیاں کی جا رہی تھیں کہ حارث ایک اور انجری کا شکار ہونے کے بعد ایکشن سے باہر ہو گئے ہیں، لیکن ڈومیسٹک سرکٹ سے ان کے اخراج کے پیچھے اصل کہانی بلوچستان کے سابق ہیڈ کوچ فیصل اقبال کے ساتھ ایک ناخوشگوار واقعہ ہے۔ذرائع کے مطابق حارث اور فیصل اقبال کے درمیان حال ہی میں ختم ہونے والی قائد اعظم ٹرافی کے دوران جسمانی جھگڑا ہوا تھا۔ اس واقعے کی اطلاع چیئرمین رمیز راجہ سمیت پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے اعلیٰ افسران کو دی گئی۔


جس کے فوراً بعد فیصل اقبال کو کوچنگ کے عہدے سے ہٹا دیا گیا، حارث کو بھی اس کے بعد سے کسی بھی ڈومیسٹک کرکٹ میں حصہ لینے کی اجازت نہیں دی گئی۔ اگلے ڈومیسٹک سیزن میں حارث کی شمولیت ابھی تک واضح نہیں ہے لیکن امید ہے کہ انہیں سیٹ اپ میں دوبارہ شامل ہونے کی اجازت دی جائے گی۔33 سالہ کھلاڑی نے پاکستان کی ٹیم میں پک اور ڈراپ ہوتے رہے ہیں۔ اس وقت سرکٹ میں سب سے زیادہ ہونہار بلے بازوں میں سے ایک سمجھا جاتا ہے، حارث قومی ٹیم میں اپنی جگہ پکی کرنے میں ناکام رہے ہیں۔

انجریز کا ایک سلسلہ، بشمول گھٹنے کا مسئلہ اور کچھ بد قسمتی، جس کے نتیجے میں انہوں نے صرف 72 بار پاکستان کی نمائندگی کی ہے۔بلے باز نے اپنے مختصر بین الاقوامی کیریئر میں بلے سے اپنی کلاس کا مظاہرہ کیا ہے۔ انہوں نے ون ڈے کرکٹ میں 46.80 کی اوسط سے 1,685 اور ٹیسٹ کرکٹ میں 32.57 کی اوسط سے 847 رنز بنائے ہیں۔ اگرچہ ان کے نمبرز 50 اوور کے فارمیٹ میں ان کو جگہ ملنی چاہیے اس کی ضمانت دیتے ہیں لیکن، اس کا امکان ہے کہ اس کا بین الاقوامی کیریئر بدقسمتی سے ختم ہو گیا ہے۔

24 views0 comments