• 24Newspk

حکومت پاکستان نے بیرون ممالک میں پھنسے ہوئے پاکستانیوں کو واپس لانے کےلئے بڑا اور اہم فیصلہ



اسلام آباد ۔ 11 مئی (24 نیوز پی کے) وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے قومی سلامتی امور ڈاکٹر معید یوسف کی میڈیا کو بریفنگ،ان کا کہنا تھا حکومت پاکستان نے بڑا فیصلہ کیا ہے کہ قرنطینہ سہولیات کے حوالہ پالیسی میں مزید لچک پیدا کر دی ہے، اب بیرون ممالک سے آنے والے پاکستانیوں کو کورونا ٹیسٹ کےلئے 48 گھنٹے کا انتظار نہیں کرنا پڑے گا۔


ان کا مزید کہنا تھا اس پالیسی کے تحت ایک ہفتے میں تقریبا 10 سے 11 ہزار پاکستانیوں کو واپس لانے کے لئے اقدامات کیے جا رہے ہیں اور یہ نئی پالیسی فوری طور پر نافذالعمل ہے۔ وزیراعظم عمران خان کی واضح ہدایات ہیں کہ جلد از جلد اور زیادہ سے زیادہ پاکستانیوں کو وطن واپس لایا جائے، رواں ہفتے امریکہ، برطانیہ، کینیڈا، افریقہ اور خلیجی ممالک سے مزید پاکستانیوں کو واپس لایا جائے گا، سیالکوٹ ایئر پورٹ اور کوئٹہ ایئر پورٹ کو بھی اس ضمن میں استعمال کیا جائے گا۔


وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے قومی سلامتی امور ڈاکٹر معید یوسف کا کہنا تھا کہ اس پوری پالیسی کا محور ایک فرد ہے جس کی زندگی میں درپیش مشکلات کو آسان بنانا وزیراعظم کا بنیادی نکتہ ہے، آج کی بریفنگ میں وہ تمام ابہام دور ہو گئے جو کہ بہت سے لوگوں کے ذہنوں میں موجود تھے۔


انہوں نے مزید بتایا کہ اب تک 20 ہزار پاکستانیوں کو واپس وطن لا چکے ہیں اور ایک لاکھ سے زائد پاکستنی واپس وطن آنے کے خواہشمند ہیں ۔اس نئی حکمت عملی کے تحت اب زیادہ تعداد میں پاکستانی واپس آ سکیں گے۔ جو بیرون ملک پاکستانی واپس آرہے ہیں ان کا اگر ٹیسٹ مثبت نہیں آرہا توان کو صوبائی حکومتیں اور ڈاکٹرز کی ایڈائز پر گھر میں کو بجھوا سکیں گے اور سیلف کوارنٹین کا کہا جائے گا۔11 مئی سے جو بھی بیرون ملک سے پاکستانی آئے گا وہ فوری طور پر حکومتی قرنطینہ یا اپنے ذاتی خرچ پر ہوٹل میں پہنچے گا جہاں پر ترجیحی بنیادوں پر اس کا ٹیسٹ کیا جائے گا، ٹیسٹ کا رزلٹ بھی جلدی یقینی بنایا جائے گا۔


انہوں نے کہا کہ آج سے 21 مئی تک 22 ممالک سے 10 ہزار 710 پاکستانیوں کو واپس لائیں گے، 90 فیصد پاکستانی خلیجی ممالک میں موجود ہیں، اگر ہدایات پر عمل نہیں کریں گے تو اس کا نقصان ان کے خاندان اور پاکستانی عوام کو ہو گا، اگر وباءکا پھیلاؤ بڑھا تو اس پر نظرثانی کرنا پڑے گی۔ انہوں نے کہا کہ ویب سائٹ www.covid.gov.pk پر ہر پرواز کی تفصیلات موجود ہیں، اس ویب سائٹ کے علاوہ کسی معلومات پر یقین نہ کیا جائے۔


Subscribe to 24Newspk 

Contact us

© 2020 by 24newspk.com all rights reserved

  • Facebook
  • Twitter
  • YouTube