• 24newspk

رضوان اور شاہین کو ورک لوڈ کی وجہ سے ایک فارمٹ چھوڑ کر دو فارمٹ کھیلنا چاہیے


ویب ڈیسک (24نیوز پی کے)قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم نے ایک صحافی کو منہ توڑ جواب دیا جس نے ان سمیت اسٹار کھلاڑیوں محمد رضوان اور شاہین شاہ آفریدی کے کام کے بوجھ کے بارے میں سوال کیا تھا۔


مین ان گرین 12 اگست کو صبح کے اوقات میں ہالینڈ کے لیے روانہ ہوں گے۔ ایک صحافی نے روانگی سے قبل پریسر کے دوران پوچھا کہ کیا اسے کام کا بوجھ کم کرنے کے لیے صرف دو فارمیٹس کھیلنا چاہیے۔“کیا آپ کو نہیں لگتا کہ کھلاڑی افسردہ تھے، کام کا بوجھ زیادہ تھا؟) تو کیا یہ اچھا خیال نہیں ہوگا اگر آپ لوگ صرف دو فارمیٹ کھیلیں؟” ایک صحافی نے پوچھا۔


“یہ آپ کی فٹنس پر منحصر ہے، مجھے نہیں لگتا کہ ہمیں خود کو دو فارمیٹ تک محدود رکھنا چاہیے۔ کیا آپ کو لگتا ہے کہ میں بوڑھا ہو گیا ہوں؟” بابر نے جواب دیا۔“کام کا بوجھ بہت زیادہ ہے،” صحافی نے مزید کہا۔ “مجھے ایسا نہیں لگتا۔ اگر بوجھ زیادہ ہے تو ہم اپنی فٹنس لیول میں اضافہ کریں گے۔”


پاکستانی کھلاڑیوں کے لیے کام کا بوجھ کوئی مسئلہ نہیں ہے کیونکہ قومی کرکٹ ٹیم نے 2022 میں صرف 12 میچز کھیلے ہیں۔ پاکستان کے لیے مصروف سیزن کا آغاز ہالینڈ کے ون ڈے سے ہوگا اور وہ جنوری 2023 تک ہوم اور اوے گیمز کھیلتی رہے گی۔



Web Desk (24NewsPK) Pakistan captain Babar Azam gave a blunt reply to a journalist who asked him about the workload of star players Mohammad Rizwan and Shaheen Shah Afridi.


The Men in Green will depart for the Netherlands in the early hours of August 12. A journalist asked during the pre-departure presser whether he should play only two formats to reduce the workload. What if you guys only play two formats?" asked a journalist.

“It depends on your fitness, I don't think we should limit ourselves to two formats. Do you think I'm old?" Babar replied. "The workload is too much," the journalist added. "I don't think so. If the load is heavy, we will increase our fitness level."



Workload is not an issue for Pakistan players as the national cricket team has played only 12 matches in 2022. The busy season for Pakistan will begin with the ODIs in the Netherlands and will continue to play home and away games until January 2023.

45 views0 comments