• 24News pk

شام میں ایک کروڑ 24 لاکھ افراد غذائی عدم تحفظ کا شکار ہیں،اقوام متحدہ


بیروت۔14فروری (24 نیوز پی کے-اے پی پی):اقوام متحدہ نے کہا ہے کہ جنگ زدہ شام میں 12.4 ملین (1 کروڑ 24 لاکھ ) افراد غذائی عدم تحفظ کا شکار ہیں، یہ تعداد کل آبادی کے 70 فیصد سے زیادہ ہے۔فرانسیسی خبررساں ادارے کے مطابق یہ بات اقوام متحدہ کے ذیلی ادارے ورلڈ فوڈ پروگرام ( ڈبلیو ایف پی ) کی ترجمان جسیکا لاسن نے گزشتہ روز ایک انٹرویو میں کہی۔انھوں نے کہا کہ اس وقت جنگ زدہ شام کے ایک کروڑ 24 لاکھ افراد مناسب خوراک کی تلاش کے لیے سرگرداں ہیں، مئی 2020 میں ان کی تعداد 9.3 ملین (93 لاکھ )تھی۔ان کا کہنا تھا کہ اس وقت ملکی تاریخ میں سب سے زیادہ شامی غذائی قلت کا شکار ہیں، بنیادی خوراک بھی عام گھرانوں کی پہنچ سے دور ہو چکی جو کہ خطرناک صورتحال ہے۔جسیکا لاسن نے کہا کہ قریباً دس سال سے جاری خانہ جنگی نے شامی معیشت تباہ کردی ہے جبکہ ملک بھر میں اضافہ ہورہا ہے، رواں سال کے آغاز پر اشیائے خوراک کی قیمتیں جنگ سے 5 سال پہلے کے عرصے سے 33 گنا زیادہ ہیں۔ان کا کہنا تھاکہ پڑوسی ملک لبنان میں مالیاتی بحران کے باعث ڈالر کی کم آمد اور کورونا وائرس لاک ڈاﺅن نے شام کی اقتصادی پریشانی میں مزید اضافہ کیا ہے۔

1 view0 comments

Subscribe to 24Newspk

Its all about urdu news

  • Twitter
  • Facebook
  • Linkedin

© 2021 by 24newspk.com all rights reserved