• 24News pk

وزیر اعظم عمران خان کی صدارت میں اعلیٰ صطح کا اجلاس


اسلام آباد۔3نومبر (24 نیوز پی کے-اے پی پی):وزیر اعظم عمران خان نے صوبائی حکومتوں، فلور ملز ایسوسی ایشن کے نمائندگان اور دیگر متعلقہ محکموں کی مشاورت سے فی الفور ملک بھر میں آٹے کی مناسب قیمتوں میں دستیابی بارے تفصیلی لائحہ عمل مرتب کرنے کی ہدایت کر دی۔ وزیر اعظم نے ملک بھر میں گندم کی قیمتوں میں استحکام اور غربت کی لکیر سے نیچے زندگی گزارنے والوں کیلئے آٹے کی مد میں براہ راست سبسڈی دینے کے حوالے سے طریقہ کار وضع کرنے کی بھی ہدایت کی ہے۔ وہ منگل کو یہاں اشیائے ضروریہ کی قیمتوں کے حوالے سے جائزہ اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ اجلاس میں روزمرہ استعمال کی اشیاء کی مناسب قیمتوں میں دستیابی کو یقینی بنانے کے حوالے سے مختلف تجاویز پر غور کیا گیا۔ وزیراعظم میڈیا آفس کے مطابق معاون خصوصی برائے امورِ نوجوانان عثمان ڈار نے ٹائیگر فورس کے رضاکاروں کی مدد سے روزمرہ استعمال کے اشیاء کی قیمتوں کے حوالے سے زمینی حقائق پر مبنی مرتب کردہ رپورٹ اجلاس کو پیش کی۔ وزیر اعظم نے ٹائیگر فورس کے رضاکاروں کی خدمات کو سراہا۔


وزیراعظم نے وفاقی وزیر برائے نیشنل فوڈ سیکورٹی اینڈ ریسرچ سید فخر امام کو صوبائی حکومتوں، فلور ملز ایسوسی ایشن کے نمائندگان اور دیگر متعلقہ محکموں کی مشاورت سے فی الفور ملک بھر میں آٹے کی مناسب قیمتوں میں دستیابی بارے تفصیلی لائحہ عمل مرتب کرنے کی ہدایت کی۔ اس ضمن میں وفاقی وزیر برائے نیشنل فوڈ سیکورٹی کی سربراہی میں کمیٹی کے قیام کی ہدایت بھی کی۔ وزیر اعظم نے ملک بھر میں گندم کی قیمتوں میں استحکام اور غربت کی لکیر سے نیچے زندگی گزارنے والوں کیلئے آٹے کی مد میں ڈائریکٹ سبسڈی دینے کے حوالے سے طریقہ کار وضع کرنے کی ہدایت کی۔ وزیر اعظم نے کہا کہ ملک میں کھانے پینے کی اشیاء کی کوئی قلت نہیں ہے تاہم ملک بھر میں اشیائےضروریہ اور بالخصوص آٹے اور گندم کی قیمتوں میں استحکام برقرار رکھنے کیلئے موثر اور عملی اقدامات جاری رہیں گے۔ اس ضمن میں وزارت نیشنل فوڈ سیکورٹی کومتعلقہ وزارتوں کے ساتھ مل کر لائحہ عمل مرتب کرنے کی بھی ہدایت کی گئی۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ صوبہ پنجاب میں قائم 368 سہولت بازاروں میں آٹے کے 20 کلو کاتھیلا 840 میں فروخت ہو رہاہے جبکہ ان بازاروں سے خریداری کا تناسب 60 فی صد ہے جبکہ روزانہ تقریباً 40 فی صد آٹا خریدار نہ ہونے کی وجہ سےبچ جاتا ہے۔


وزیر اعظم نے صوبائی حکومتوں کو ضلعی انتظامیہ کی مدد سے منافع خوروں اور ذخیرہ اندوزں کے خلاف بلا تفریق اور بھرپور کارروائی کرنے کی بھی ہدایت کی ۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ صوبہ سندھ کی طرف سے روزانہ 8000 ہزار ٹن سے زائد گندم جاری کی جا رہی ہے۔وزیر اعظم نے حکومت پنجاب کو یوٹیلیٹی سٹورز کارپوریشن کو ضرورت کے مطابق آٹا دستیابی کو یقینی بنانے کی بھی ہدایت کی۔ وفاقی وزیر برائے صنعت و پیداوار حماد اظہر نے اجلاس کو بتایا کہ ایک لاکھ ٹن چینی کراچی پہنچ چکی ہے جس میں 25 ہزار ٹن یوٹیلیٹی سٹورز کارپوریشن جبکہ 75 ہزار ٹن پنجاب حکومت نے خرید لی ہے۔ وفاقی وزیر نے اجلا س کو بتایا کہ پنجاب میں کرشنگ سیزن 10 نومبر سے شروع ہو جائے گا جس کے بعد چینی کی قیمتوں میں واضح کمی آئی گی تاہم صوبہ سندھ کی جانب سے یہ عمل 30 نومبر سے شروع ہوگا۔



Drop Me a Line, Let Me Know What You Think

© 2020 by 24newspk.com all rights reserved